ختم نبوت کے حلف نامے میں تبدیلی، نوازشریف نے بحالی کا حکم دیدیا

اسلام آباد(وسیم عباسی)پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سربراہ نوازشریف نے الیکشن ایکٹ 2017 کے تحت ختم نبوت سے متعلق اقرار نامے میں کی گئی تبدیلی کا نوٹس لیتے ہوئے اسے دوبارہ پچھلی حالت میں بحال کرنے کی فوری ہدایت کی ہے،مسلم لیگ (ن) کے اہم ذرائع کے مطابق الیکشن ایکٹ 2017 کے تحت اس طرح کی تبدیلی کے بارے میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کو آگاہ نہیں کیا گیا تھا،سینئر پارٹی ذرائع نے کہا کہ کی گئی تبدیلی کو پہلے والی حالت میں بحال کیا جائے گا،پارٹی کو ہدایت کی گئی ہے کہ پچھلے قانون کے تحت زبان کی بحالی کیلئے کام شروع کیا جائے۔
پیر کو صدر مملکت ممنون حسین نے جس ایکٹ پر دستخط کیے اس میں اقرار نامے اور حلف کی جگہ امیدوار کے صرف اقرار کا ذکر ہے،بالکل اسی طرح سینیٹ ،قومی اسمبلی اور صوبائی اسمبلیوں کے امیدوار اقرار کرتے وقت اب بھی اس کے پابند تھے کہ وہ ختم نبوت پر ایمان رکھتے اور اس کیلئے وہ حلف لیتے وقت ’’میں حلفاً اقرار کرتا ہوں‘‘ کی بجائے ’’میں اقرار کرتا ہوں‘‘ کہتے ۔نوازشریف نے انہیں بتائے بغیر فارم میں تبدیلی پر ناراضگی کا اظہار کیا ہے، سینئر (ن) لیگی رہنما کا مزید کہنا تھا کہ سابق وزیراعظم نوازشریف نے حلف نامے میں ’’میں حلف لیتا ہوں‘‘ کے الفاظ دوبارہ شامل کرنے اور ختم نبوت سے متعلق کی گئی تبدیلیوں کو ختم کرکے دوبارہ پہلے والی حالت میں بحال کرنے کی ہدایات کی ہیں۔
بشکریہ : جنگ اخبار

اپنا تبصرہ بھیجیں