مدارس کے کردار کو کبھی فراموش نہیں کیا جاسکتا۔مصطفی کمال

کراچی/ بنوریہ میڈیا: سابق سٹی ناظم اور پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصطفی کمال کا پارٹی لیڈران کے ہمراہ جامعہ بنوریہ عالمیہ کا دورہ، وفد میں پاک سرزمین پارٹی کے انیس قائم خانی ، وسیم آفتاب اور دیگر راہنما بھی شامل تھے، تفصیلات کے مطابق پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصطفی کمال نے وفد کے ہمراہ جامعہ بنوریہ کا دورہ کیا اور جامعہ بنوریہ کے سربراہ مفتی محمد نعیم سے ملاقات کی ، ملاقات کے دوران مصطفی کمال نے اپنی پارٹی کے اغراض و مقاصد بیان کئے اور 29 تاریخ کو پاک سرزمین پارٹی کے جلسے میں شرکت کی دعوت دی، جو کہ مفتی محمد نعیم نے قبول کرلی، مصطفی کمال کا کہنا تھا کہ جامعہ بنوریہ سے میرا تعلق پرانا ہےاپنے سابقہ دور میں میں کئی بار اس ادارہ کا وزٹ کرچکا ہوں، اس موقع پر مفتی محمد نعیم نے سابقہ دور میں جامعہ بنوریہ کے پانی و دیگر مسائل کے حل میں مصطفی کمال کے تعاون کی تائید کرتے ہوئے کہا کہ مصطفی کمال نے اپنے سابقہ سٹی ناظم کے دور میں جامعہ بنوریہ سے بھرپور تعاون کیا، مصطفی کمال کا کہنا تھا کہ مدارس کے کردار کو کبھی فراموش نہیں کیا جاسکتا، معاشرے میں دینی مدارس اہمیت سے کسی کو انکار نہیں ہونا چاہئے، اس موقع پر مصطفی کمال نے حکومت سندھ کی جانب سے وفاق کو پیش کی گئی حالیہ مدارس سے متعلق رپورٹ میں مشکوک مدارس کی فہرست میں کراچی کے معروف دینی مدارس کے نام کو شامل کئے جانے پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جامعہ بنوریہ اور دارالعلوم جیسے بڑے اداروں کو مشکوک فہرست میں شامل کرنا انتہائی افسوسناک عمل ہے، ان کا کہنا تھا کہ جامعہ بنوریہ اور مفتی تقی عثمانی صاحب کے ادارے کی خدمات کو میں ذاتی طور پر جانتا ہوں، حکومت سندھ کی جانب سے ان اداروں کے ساتھ ایسا عمل افسوسناک ہے اور میں ان اداروں کے ساتھ کھڑا رہونگا۔

1

2

3

4

5

6

اپنا تبصرہ بھیجیں