ایسا نورانی اجتماع جس کی مثال نہیں ملتی

تحریر: نذیر ناصر

اجتماع میں نہ کو ئی نعرہ لگا نہ کسی کو کافر کہا گیا اور نہ کسی سے شکوہ اور شکایت کی گئی بس یہ پیغام دیا گیا کہ اللہ ایک ہے اس کے سواء کو ئی معبود نہیں اللہ تعالی نے کامیابی دین پر عمل کرنے میں رکھی ہے یہ تفرقات اور گروہی تقسیم معاشرے کے لیے زہر قاتل ہے وہ نوجوان جو فرقہ واریت سے تنگ لبر ل ازم کی طرف مائل ہورہے ہیں وہ آئیں دیکھیں تبلیغ کے ان اجتماعات میں کتنا سکون اور کس طریقے سے اسلام کی تبلیغ کا فریضہ انجام دیا جارہاہے .جہاں غلطی کرنے والے کو غلط قرار دینے کی بجائے اس کو عمل کے ذریعے احساس دلایا جاتاہے کہ وہ غلطی پرہے .جہاں آنے والا ہر فرد خلوص وللہیت سے لبریز ہوتاہے.جہاں ریاکاری کا شائبہ بھی نہیں ہوتا محمود ہو یا عیاض سب ایک صف میں کھڑے اللہ کی وحدانیت کو سنتے سناتے اور اس پر عمل کرنے پر برآنگیختہ کرتے ہیں میرا دعوی ہے جو لوگ تبلیغ یا دین سے نفرت کے مرتکب ہیں وہ صرف تین دن کےلیے ان کے ساتھ چل کر دیکھیں ان کی تقدیر روشن ہوجائے گی.کراچی کا اجتماع جس میں 15لاکھ سے زائد لوگوں نے شرکت کی جہاں ایک لفظ بھی کسی فرقہ .کسی مذہب یا کسی شخص کیخلاف نہیں کہا گیا حتی کہ دشمن کےلیے بھی دعائیں کی گئی . پاکستان میں یا دنیا میں حج کے بعد تبلیغی اجتماع ہے جو ہر سطح سے پاکیزگی کا مظہر. اجتماع مبلغ اسلام حضرت مولانا طارق جمیل صاحب کے ایمان افروزاختتامی بیان اور حضرت مولانا محمد احمد بہالپوری صاحب کی رقت آمیز دعا سے اختتام پذیر

12647560_793526390778294_230409167980072903_n

اپنا تبصرہ بھیجیں